sad urdu ghazal poetry- sad ghazals

ﯾﮩﯽ ﻭﻓﺎ ﮐﺎ ﺻﻠﮧ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ

ﯾﮩﯽ ﻭﻓﺎ ﮐﺎ ﺻﻠﮧ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﯾﮧ ﺩﺭﺩ ﺗﻮ ﻧﮯ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﯾﮩﯽ ﺑﮩﺖ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺗﻢ ﺩﯾﮑﮭﺘﯽ ﮨﻮ ﺳﺎﺣﻞ ﺳﮯ
ﮐﮧ ﺳﻔﯿﻨﮧ ﮈﻭﺏ ﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﺭﮐﮭﺎ ﺗﮭﺎ ﺁﺋﯿﻨﮧ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﭼﮭﭙﺎ ﮐﮯ ﺗﻢ ﮐﻮ
ﻭﮦ ﮔﮭﺮ ﭼﮭﻮﮌ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﺗﻢ ﻧﮯ ﮨﯽ ﺁﺋﯿﻨﮧ ﺩﻝ ﻣﯿﺮﺍ ﺑﻨﺎﯾﺎ ﺗﮭﺎ
ﺗﻢ ﻧﮯ ﮨﯽ ﺗﻮﮌ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﺑﺎﻵﺧﺮ ﺯﯾﺴﺖ ﮐﮯ ﻗﺎﺑﻞ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﺑﮍﯼ ﻣﺸﮑﻞ ﺳﮯ ﭘﺘﮭﺮ ﺩﻝ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﻭﮦ ﺁﺋﮯ ﮨﯿﮟ ﺳﺮﺍﭘﺎﺋﮯ ﻣﺠﺴﻢ ﺑﻦ ﮐﺮ
ﻣﯿﮟ ﮔﮭﺒﺮﺍ ﮐﺮ ﻣﺠﺴﻤﮧ ﺩﻝ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ
ﺟﮩﺎﮞ ﻣﻘﺘﻮﻝ ﮨﯽ ﭨﮭﮩﺮﮮ ﮨﯿﮟ ﻣﺠﺮﻡ
ﯾﮩﯽ ﮐﭽﮫ ﺳﻮﭺ ﮐﮯ ﻗﺎﺗﻞ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﺑﮍﺍ ﻣﺤﺘﺎﻁ ﮨﻮﮞ ﺗﯿﺮﯼ ﻣﺤﻔﻞ ﻣﯿﮟ
ﺗﯿﺮﯼ ﺟﺎﻧﺐ ﺳﮯ ﺳﻮ ﻏﺎﻓﻞ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﻣﯿﮟ ﮐﮭﺎ ﮐﺮ ﭨﮭﻮﮐﺮﯾﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﮔﻠﯿﻮﮞ ﮐﯽ
ﺑﮍﺍ ﻣﺮﺷﺪ ﺑﮍﺍ ﮐﺎﻣﻞ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﮐﻮﺋﯽ ﺳﻤﺠﮭﮯ ﮔﺎ ﮐﯿﺎ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ
ﺧﻮﺩ ﺍﭘﻨﮯ ﻟﯿﮯ ﻣﺸﮑﻞ ﺑﻨﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ
ﯾﮩﯽ ﻭﻓﺎ ﮐﺎ ﺻﻠﮧ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ
ﯾﮧ ﺩﺭﺩ ﺗﻮ ﻧﮯ ﺩﯾﺎ ﮨﮯ ﺗﻮ ﮐﻮﺋﯽ ﺑﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ

______________

ﯾﮧ ﺍﻭﺭ ﺑﺎﺕ ﮨﮯ ﺗﺠﮫ ﺳﮯ ﮔﻼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ

ﯾﮧ ﺍﻭﺭ ﺑﺎﺕ ﮨﮯ ﺗﺠﮫ ﺳﮯ ﮔﻼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﺟﻮ ﺯﺧﻢ ﺗﻮ ﻧﮯ ﺩﯾﮯ ﮨﯿﮟ ﺑﮭﺮﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﮨﺰﺍﺭ ﺟﺎﻝ ﻟﯿﮯ ﮔﮭﻮﻣﺘﯽ ﭘﮭﺮﮮ ﺩﻧﯿﺎ
ﺗﺮﮮ ﺍﺳﯿﺮ ﮐﺴﯽ ﮐﮯ ﮨﻮﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﯾﮧ ﺁﺋﻨﻮﮞ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﺩﯾﮑﮫ ﺑﮭﺎﻝ ﭼﺎﮨﺘﮯ ﮨﯿﮟ
ﮐﮧ ﺩﻝ ﺑﮭﯽ ﭨﻮﭨﯿﮟ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﺟﮍﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﻭﻓﺎ ﮐﯽ ﺁﻧﭻ ﺳﺨﻦ ﮐﺎ ﺗﭙﺎﮎ ﺩﻭ ﺍﻥ ﮐﻮ
ﺩﻟﻮﮞ ﮐﮯ ﭼﺎﮎ ﺭﻓﻮ ﺳﮯ ﺳﻼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﺟﮩﺎﮞ ﮨﻮ ﭘﯿﺎﺭ ﻏﻠﻂ ﻓﮩﻤﯿﺎﮞ ﺑﮭﯽ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ
ﺳﻮ ﺑﺎﺕ ﺑﺎﺕ ﭘﮧ ﯾﻮﮞ ﺩﻝ ﺑﺮﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﮨﻤﯿﮟ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﺍﻧﺎﺋﯿﮟ ﺗﺒﺎﮦ ﮐﺮ ﺩﯾﮟ ﮔﯽ
ﻣﮑﺎﻟﻤﮯ ﮐﺎ ﺍﮔﺮ ﺳﻠﺴﻠﮧ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﺟﻮ ﮨﻢ ﭘﮧ ﮔﺰﺭﯼ ﮨﮯ ﺟﺎﻧﺎﮞ ﻭﮦ ﺗﻢ ﭘﮧ ﺑﮭﯽ ﮔﺰﺭﮮ
ﺟﻮ ﺩﻝ ﺑﮭﯽ ﭼﺎﮨﮯ ﺗﻮ ﺍﯾﺴﯽ ﺩﻋﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ
ﮨﺮ ﺍﮎ ﺩﻋﺎ ﮐﮯ ﻣﻘﺪﺭ ﻣﯿﮟ ﮐﺐ ﺣﻀﻮﺭﯼ ﮨﮯ
ﺗﻤﺎﻡ ﻏﻨﭽﮯ ﺗﻮ ﺍﻣﺠﺪؔ ﮐﮭﻼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ

______________

جسے چھوڑنا ہو اسے مکمل چھوڑ دیں
آدھا ادھورا چھوڑنے کا کیا مطلب ؟
اس طرح آدھا ادھورا چھوڑنے سے آپ کا تو نہیں پتہ
لیکن دوسرا بہت اذیت میں ہوتا ہے ۔

____________________

لوگوں کو محبت ہو جاتی ہے

کبھی پہلی نظر میں
کبھی صدیوں کی مسافتوں میں۔۔۔
لیکن کچھ ایسے بھی ہوتے ہیں جن کو محبت کروائی جاتی ہے 💙
زور زبردستی دل میں جگہ بنوائی جاتی ہے 💔
حکم مان کر
مان رکھ کر
رشتے بچانے کی خاطر
دل کو بھی اپنے اختیار میں کرنا پڑتا ہے
کبھی کبھی بچھڑنے کا سبب بھی بے وفائی نہیں ہوتا۔۔۔
جیسے کسی شاخ سے گرنے والے ہر پتے کی ذمہ دار ہوا یا آندھی نہیں ہوتی ناں کچھ مرجھا کر بھی زمین کے سینے سے آ لگتے ہیں۔۔۔۔🍂🍁
بلکل ویسے ہی کچھ محبتوں اور رشتوں کے بچھڑنے کی وجہ بھی بے وفائی نہیں ہوتی۔۔۔
بس میرا خیال ہے کہ کچھ لوگ ایک دوسرے کے لیے بنے ہی نہیں ہوتے اور ایک دوسرے کی چاہ میں لگ جاتے ہیں ۔۔۔۔
قدرت انھیں کسی اور کے حصے میں لکھ چکی ہوتی ہے تو پھر ایسوں کو کہیں ناں کہیں بچھڑنا تو پڑتا ہی ہے ناں۔۔۔۔۔۔
بس جب بچھڑتے ہیں تو ایک دوسرے کو کوستے ہیں ۔۔۔۔بے وفا کہہ کر بھرم توڑتے ہیں۔۔
یہ کیوں نہیں سوچتے کہ ہو سکتا کوئی ہمیں بھی اتنی شدت سے چاہتا ہو۔۔۔
جانے والے کی سزا آنے والوں کو کیوں دے دیتے ہیں ہم۔۔۔۔
میری زندگی سے بھی کئی رشتے بچھڑ گئے ہیں
میں نے بھی اتنے اتنے عزیز رشتوں کو کھویا ہے کہ جن کے بغیر مجھے چین نہیں پڑتا تھا۔۔۔
مگر جب میں یہ سمجھی ناں کہ بچھڑنے کی وجہ ہمارا غلط انتخاب بھی ہو سکتا ہے تو میں مطمئن ہوگئی۔۔۔مجھے چین ا گیا
اس تحریر کا مقصد یہ ہے کہ خدارا بچھڑنے والوں کو بے وفائی کے الزام سے آزاد کر دوں میری مانو خود کو صاف کر لو۔۔۔
وہ اپنا کل تھا گزرا ہوا کل
مگر ہو سکتا وہ بچھڑنے والا کسی کا انے والا کل ہو۔۔۔
اپنی آہوں اور بدعاوں سے کسی کے انے والے کل کو بے رنگ نہ کر دو کہی تم سب ۔۔۔۔
جو تمہیں چھوڑ کر کسی کا ہے تو ہو سکتا کوئی کسی کو چھوڑ کر تمھارے لیے بھی رکھا گیا ہو۔۔۔
جانے والوں کو آزاد کر دوں
آزاد کر دو

______________________

میں بہت ہی زیادہ عجیب سی لڑکی ہوں

کہ اگر بولوں تو میرے جتنی کسی کی زبان نہ چلے، چپ رہوں تو میرے جتنا خاموش کوئی نہیں، میں ایکٹنگ کروں تو میرے جیسا فنکار کوئی نہیں، میں اپنا خیال رکھوں تو میرے جیسا خوش کوئی نہیں، اور اگر میں خود کو اکیلا چھوڑ دوں تو میرے آنسوؤں کا کوئی حال نہ رہے، میں اخلاق میں سب سے اچھی ہوں مگر میرے جتنا بد تمیز کوئی نہیں… میں رشتہ نبھاؤں تو میرے جیسا دوست کوئی نہیں،
اکیلے رہنا چاہوں تو مہینوں کسی سے بات نہ کروں مگر جب کسی کی ضرورت ہو تو میرے جتنا کوئی تڑپتا نہیں… مگر ان سب باتوں کے علاوہ ایک بات میں جو بھی ہوں ، جیسی بھی ہوں، میں مطلبی نہیں ہوں، میں رشتوں میں منافقت نہیں کرتی… 💯

_______________________

“پشیمانی”

ایک پشیمانی رہتی ہے
الجھن اور گرانی بھی
آؤ پھر سے لڑ کر دیکھیں
شاید اس سے بہتر کوئی
اور سبب مل جائے ہم کو
پھر سے الگ ہو جانے کا
“گلزار”

_____________________

عورت

عورت کو چاند نہیں ہونا چاہیے
جسے ہر کوئی شوق سے، محبت سے، چاہت سے دیکھتا رہے
میرے خیال سے عورت کو سورج ہونا چاہیے جسے کوئی بھی عام شخص نہ دیکھ سکے وہ جسے دیکھنے کیلئے خاص قوت درکار ہو
وہ جسکی روشنی کی حدت سے آنکھیں چندھیانے لگے
وہ جسے دیکھنے کیلئے آنکھ اٹھائیں تو وہ ہزار بار جھپکے
وہ بولے تو اسکے لہجے کی تپش برداشت نا ہو
وہ جو گرجے تو مضبوط عمارتیں ڈھے جائیں
وہ جو برسے تو اپنے ساتھ پورا ملبہ بہا لے جاۓ

_______________________

ایسا کیوں ہوتا ہے کہ جب ہم کسی کو دل سے چاہتے ہیں،

اور جب ہمیں یہ معلوم ہوجائے ک اس شخص کو ہمارے جذبات اور احساسات کی کوئی احساس ہی نہیں،

تو پھر ایسا کیوں ہوتا ہے کہ اس کے بجائے ہمیں خد سے نفرت ہو جاتی ہے

،کیو ہمیں اپنے وجود سے گن لگنے لگتی ہے،ایسا کیو ہوتا ہے ہمیں کیوں اپنے آپ سے نفرت ہونے لگتی ہیں 💔💔💔

sad urdu ghazal poetry- sad ghazals
sad urdu ghazal poetry- sad ghazals

Read more content :

sad urdu ghazal- sad ghazal

sad poetry – sad love shayari

Leave a Reply

Your email address will not be published.